60

پیپلزپارٹی کے خلاف سندھ میں نیا اتحاد بننے کو تیار پہلی بیٹھک لاڑکانہ میں ہوئی میزبانی علامہ راشد سومرو، اور سابق سینیٹر صفدر عباسی نے کی

پیپلزپارٹی کے خلاف سندھ میں نیا اتحاد بننے کو تیار

پیپلزپارٹی کے خلاف نئے اتحاد کی پہلی بیٹھک لاڑکانہ میں ہوئی

پیپلزپارٹی کے خلاف اتحاد کی پہلی مجلس کی میزبانی علامہ راشد سومرو، اور سابق سینیٹر صفدر عباسی نے کی

پہلے اجلاس میں دادو اور نوشہروفیروز سمیت سکھر اور لاڑکانہ ڈویژن کے زمہ دار سیاسی شخصیات شریک ہوئے

اجلاس میں سابق وزیراعظم و سابق چیئرمین سینٹ میاں محمد سومرو شریک

سابق وزیراعظم غلام مصطفی جتوئی کے فرزند و سابق وفاقی وزیر غلام مرتضی جتوئی شریک ہوئے

سابق وزیراعلی لیاقت علی جتوئی، سابق وزیراعلی سید غوث علی شاہ، سمیت سابق گورنر ممتاز علی بھٹو کے فرزند امیر بخش بھٹو شریک ہوئے

سابق وفاقی و صوبائی وزیر سردار علی گوہر، سابق وفاقی وزیر ریلوے غوث بخش مہر، سابق صوبائی وزیر اغا تیمور پٹھان شریک ہوئے

سابق صوبائی وزیر ڈاکڑ ابراہیم جتوئی، بےنظیر بھٹو شہید کی پولیٹیکل سیکرٹری محترمہ ناہید خان شریک ہوئی

رکن صوبائی اسمبلی معظم علی عباسی، شہریار خان مہر، مسرور خان جتوئی، راجہ علی نواز مہر شریک ہوئے

اجلاس میں سندھ کی بڑی قوم پرست جماعت کے سربراہ ایاز لطیف پلیجو، ریاض حسین چانڈیو، ڈاکڑ قادر مگسی سمیت دیگر شریک ہوئے

سردار مبین جتوئی، عادل خان انڑ، عبدالستار راجپر، علامہ ناصر سومرو، سائیں رکیو میرانی سمیت دیگر شریک ہوئے

قوم پرست رہنما ثنان خان قریشی جیل میں ہونے کے باعث اجلاس میں شریک نا ہوسکے

اجلاس میں سندھ کو درپیش مشکلات، سندھ میں بڑھتی ہوئی غربت، کرپشن اور قابلی تکرار پانی کی شدید ترین قلت پر مشاورت ہوئی، زرائع

اجلاس میں شریک رہنمائوں نے سندھ کی زمینوں اور جزائر تھر کول کے معدنی وسائل کو بیچنے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا

لاڑکانہ عوامی اتحاد کے طرز پر غیر جماعتی اتحاد قائم کرنے پر تمام رہنماء متفق ، زرائع

پیپلزپارٹی کے خلاف قائم ہونے والا غیر جماعتی اتحاد بلدیاتی اور ائندہ کے انتخابات میں مشترکہ بھرپور حصہ لینے پر مشاورت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں