88

کراچی کی ذمینوں پر بحریہ ٹائون کے قبضے خلاف سندھ سے بڑی تعداد میں قافلے کراچی پہنچ گئے

بحریہ ٹائون کے خلاف آج سندھ بھر سے بڑی تعداد میں قافلے کراچی شہر پہنچ چکے۔ اس وقت ایک محتاط اندازے کے مطابق ساڑھے تین سے چار ہزار لوگ بحریہ ٹائون کے مرکزی دروازے پر موجود ہیں۔ بحریہ ٹائون انتظامیہ نے آنے جانے کے راستوں کو مکمل سیل کر دیا ہے۔ مظاہرین کی بڑی تعداد ٹول پلازہ پر پھنسی ہوئی ہے۔ M9 موٹر وے کو دونوں اطراف سے بند کر دیا گیا ہے۔ چودہ تھانوں کی پولیس نفری کو تعینات کیا گیا ہے لیکن چند دہرنے کے شرکاء کو اُن کی جانب سے یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ ان پر طاقت کے استعمال سے گریز کیا جائے گا۔ احتجاج و دہرنا میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ افسوس کہ ہماری مین اسٹریم میڈیا میں زرا بھی جرات نہیں کہ وہ اس پر رپورٹ کرے۔ باتیں آزاد میڈیا کی تو بہت کی جاتی ہے لیکن یہ بہت بڑا سوالیہ نشان ہے اُن صحافتی تنظیموں اور اُن کے نمائندگان پر۔ Selective Reporting ہی وجہ بنی کہ آج حکومتِ وقت طرح طرح آرڈیننس سے میڈیا کو کنٹرول کرتی ہے۔ کہاں گئے حق و سچ کا پرچار کرنے والے دعویدار؟ کہاں ہیں وہ با ضمیر اینکر حضرات جو کہتے ہیں کہ ہم بکائو اور لفافہ صحافی نہیں۔ اس سے بڑا ثبوت اور کیا ہوگا کہ آپ سب کی زبانوں کو تالے اور قلم کی سیاحی خشک ہو چکی ہے۔ آپ ڈھونگی ہیں، سیٹھوں کے آلہ کار ہیں۔ آپ کی پروگرام کی ریٹنگز سے ادارہ منافع کماتا ہے تو آپ ان کے سہولت کار ہیں۔ ضمیر کی بات آج کے بعد نا ہی کریں تو مناسب ہوگا۔ خراج تحسین پیش کرتا ہوں چند سندھی میڈیا اداروں کو کہ وہ اشتہارات کی پرواہ کیئے بغیر اس معاملے کو رپورٹ کر رہے ہیں۔ بالخصوص سندھ ٹی وی جو ہر پل update کیئے ہوئے ہے اپنے ناظرین کو۔ اٹھو دوستوں تھوڑا اپنے ضمیر کو جھنجوڑو۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں