63

اسلام آباد میں مسلسل شیخ رشید ناکام سرکاری ملازمین سڑکوں پر آگئے گرفتارآنسوگیس کا استعمال

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں سرکاری ملازمین کے اپنی تنخواہوں میں اضافے کے حق میں مظاہرے میں ہولیس کی دو مرتبہ آنسو گیس پھینکی گئی ایک درجن اس تحریک کے رہنما گرفتار جن می رمضان باجوہ بھی شامل ہیں
‏مطالبات تسلیم ہونے تک پیچھے نہیں ہٹیں گے،سرکاری ملازمین کاموقف‏ لیڈی ہیلتھ ورکرز نے اپنے مطالبات کی منظوری تک دھرنے کا اعلان کر رکھا ہے
‏اسلام آباد سیکرٹریٹ اوروزیراعظم ہاؤس جانےوالاراستہ بند،پولیس،رینجرز تعینات
وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے بتایا کہ گریڈ ون سے سولہ کے وفاقی ملازمین کی تنخواہوں مئں 40 فیصد اضافے کا طے ہوگیا تھا لیکن ملازمین نے گریڈ 17 سے 22 تک کی تنخواہوں میں اضافے کا مطالبہ کردیا اور صوبوں کے ملازمین نے بھئ دبایو شالنا شروع کردیا انہوں نے کہا کہ گرفتار رہنمائوں سے مذاکرات جاری ہیں تحریک کو پھیلنے اور صوبوں کے ملازمین کو اسلام آباد آنے سے روکا جائے گا جن۔ صوبوں کے ملازمیں کا مسلہ ہے وہ وہیں احتجاج کریں
تنخواہیں بڑھانے کا مطالبہ کرنے والے سرکاری ملازمین اور وفاقی وزرا کے درمیان کل مذاکرات ناکام ہونے کے بعد آج ملازمین نے اسلام آباد میں دھرنے کا اعلان کیا تھا اور آج ملازمین نے پارلیمنٹ ہاؤس کی طرف مارچ کرنے کی کوشش کی تو پولیس نے ملازمین پر دھاوا بول دیا۔

پولیس نے احتجاجی مظاہرین پر آنسو گیس کی شیلنگ کی اور لاٹھی چارج کردیا جب کہ سرکاری ملازمین نے پولیس پر پتھراؤ کیا جس کے بعد پولیس نے متعدد سرکاری ملازمین کو گرفتار بھی کرلیا۔

سرکاری ملازمین کے احتجاج کے باعث شاہراہ دستور پر پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے جب کہ سکیورٹی حکام نے اسلام آباد سیکرٹریٹ اور وزیراعظم ہاؤس جانے والے راستوں کو بند کردیا۔

پولیس کی مزاحمت کے باوجود سرکاری ملازمین سیکرٹریٹ کے دوازے کھول کر اندر گھس گئے۔

دوسری جانب لیڈی ہیلتھ ورکرز بھی دھرنا دینے کے لیے اسلام آباد پریس کلب پہنچ گئی ہیں،لیڈی ہیلتھ ورکرز پاکستان بھر ،آزاد کشمیر اور گلگت سے آئی ہیں اور انہیں مستقل کرنے کے ساتھ پینشن دینے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

لیڈی ہیلتھ ورکرز کا کہنا ہےکہ وہ اپنے مطالبات کی منظوری کےلیے سرکاری ملازمین کے دھرنے میں شریک ہوں گی۔

‏سرکاری ملازمین کا ڈی چوک میں تنخواہوں میں اضافے کے لٸے دھرنا ناکام بنانے کے لئے پولیس نے گرفتاریوں کا سلسلہ شروع کر دیا
تھانہ سیکریٹریٹ پولیس نے دھرنے کے 7 قائدین حراست میں لے لیا
گرفتار افراد میں چیف آرگنائزر آل پاکستان ایمپلائز گرینڈ الائنس رحمان باجوہ شامل
‏اسلام آباد میں سرکاری ملازمین کا پارلیمنٹ کے سامنے احتجاج
مسلم لیگ نون کی ایم پی اے حنا ہروئز بٹ نے سماجی روابط کی ویب سائٹ پر ٹویٹر کہا کہ ”
‏میں اسلام آباد میں اپنے حقوق کیلئے احتجاج کرنے والے وفاقی ملازمین پر شیلنگ اور تشدد کی بھرپور مذمت کرتی ہوں۔ بڑے بڑے لیکچر دینے اور اسلام آباد میں 126 دن ڈرامہ کرنے والا آج اپنے حق کیلئے کھڑے ملازمین پر ظلم کر رہا ہے۔۔۔ ”

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں