37

کراچی میں افغانستان سے رابطہ میں 2 دہشتگردوں کی گرفتاری کا دعوی حامد میر کا کہنا کہ کسی ملک کا نام نہیں لیا گیا

کراچی میں سی ٹی ڈی نے کارروائی کرتے ہوئے 2دہشت گردوں کو گرفتار کر لیا،گرفتار دہشت گردوں کا تعلق افغانستان کی کالعدم تنظیم ایس آر اے سے ہے،

جبکہ ممتاز صحافی حامد میر نے سازشی تھیوری گھڑ لی اور ان کا کہنا ہے کہ ” ڈی آئی جی سی ٹی ڈی عمر شاہد نے دو دہشت گردوں جاوید مانگریو اور ممتاز سومرو کی گرفتاری کا اعلان کیا جو کراچی میں سیکیورٹی فورسز پر حملوں کی منصوبہ بندی کر رہے تھے ڈی آئی جی نے دعوی کیا کہ یہ دہشتگرد “غیر ملکی دشمنوں” سے رابطے میں ہیں لیکن اس نے کبھی کسی دشمن یا ملک کا نام نہیں لیا ”

عمر شاھد نے بتایا گرفتاردہشت گرد وں نے حساس ادارے کے دفتر اور رینجرز پر حملوں کا اعتراف کرلیا۔ڈی آئی جی سی ٹی ڈی عمر شاہد نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سی ٹی ڈی نے کراچی میں گزشتہ رات کارروائی کی جس میں 2 دہشت گردوں کو گرفتار کیا گیا جن میں جاوید منگریو اور ممتاز سومرو شامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ چائنہ ٹائون کے مالک کی گاڑی پر آئی ڈی انہی دہشت گردوں نے لگائی تھی جبکہ دہشت گردی کے واقعات میں غیر ملکی ایجنسیاں ملوث ہیں۔ طارق روڈ سے گرفتار دہشت گرد ایس آر اے رکن اور کمانڈر نکلا۔عمر شاہد نے کہا کہ گرفتار دہشت گردوں کا تعلق افغانستان کی کالعدم تنظیم ایس آر اے سے ہے۔ گرفتاردہشت گرد حساس ادارے کے دفتر اور رینجرز پر حملے میں ملوث ہیں۔ ملزم ممتاز سومرو کو غیرملکی ریسٹورنٹ کے باہر سے گرفتار کیا گیا جو غیرملکی ریسٹورنٹ کے مالک کی گاڑی پر حملہ کرنا چاہتا تھا۔انہوں نے کہا کہ ایس آر اے سربراہ اصغر شاہ نے ایک گروپ بنایا تھا اور افغانستان میں دہشت گرد گروپوں کی میٹنگز ہوتی ہیں۔ یہ دہشت گرد افغانستان میں کارروائیوں کا منصوبہ بناتے ہیں۔ کالعدم تنظیم ایس آر اے کو فنڈنگ افغانستان سے ہوتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں