107

پولیس اور ڈاکووں کے مابین فائرنگ کے تبادلے میں 1 پولیس اہلکار شہید جبکہ تین اہلکار زخمی

تنگوانی ( رپورٹ : پیر بخش نوناری ) تنگوانی کے علاقے میں پولیس اور ڈاکووں کے مابین فائرنگ کے تبادلے میں 1 پولیس اہلکار شہید جبکہ تین اہلکار زخمی ہوگئے ۔ پولیس کے فائرنگ سے ڈاکو موقع سے فرار ہوگئے ۔ پولیس نے علاقے کی ناکہ بندی کرکے سرچ آپریشن شروع کر دیاہے ۔ غوثپور پولیس تھانہ کے حدود انڈس ہائی وے سندھو ڈرو کے مقام پر گشت پر مامور پولیس موبائیل پر ڈاکوؤں نے حملہ کر کے شدید فائرنگ کر دیا ۔ ڈاکوں کے فائرنگ سے پولیس اہلکار سجاداحمد خاصخیلی موقع پر شہید ہوگئے جبکہ تین پولیس اہلکار نذیر احمد ۔ سکندر علی ۔ محمد اسلم زخمی ہوگئے ۔ اطلاع ملنے پر ضلع بھر کے مختلف تھانوں کی پولیس نفری موقع واردات پر پہنچ گئی جبکہ شہید ہونے والے پولیس اہلکار اور زخمیوں کو پولیس نے ہسپتال منتقل کر دیا ۔ زخمی پولیس اہلکاروں کی حالت تشویشناک ہونے پر انہیں لاڑکانہ اسپتال رفر کیا گیا ۔ دوسرے جانب پولیس نے علاقے کی ناکہ بندی کرکے سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے ۔ جبکہ پولیس کانسٹیبل سجاداحمد خاصخیلی خیرپور شہر کا رہائشی تھا اور کندھ کوٹ گھوٹکی پل کے کنسٹریشن کے کام پر ڈیوٹی پر آیا ہوا تھا ۔ یاد رہے کہ کچے کے علاقے میں رینجرز کے ڈی ایس آر ۔ پولیس ایس ایچ او اور تین پولیس اہلکار سمیت 5 اہلکاروں کو ڈاکوں نے شہید کیا ہے اور کچھ دن قبل ڈاکوں نے ایک ہیں خاندان کے 9 افراد کو شہید کیا ۔ جس کے بعد کچے کے حالات کشیدہ ہیں ۔ پولیس اور اعلی عہدیداروں کی جانب سے کچے میں آپریشن کا اعلان تو کیا گیا ہے لیکن اب تک کوئی مثبت پیش رفت نظر نہیں آ رہا ۔ جبکہ دوسرے جانب شہید پولیس اہلکار سجاد احمد خاصخیلی کی نمازہ جنازہ پولیس ہیڈ کواٹر میں ادا کردی گئی ۔ جبکہ شہید پولیس اہلکار کی نماز جنازہ میں آر پی او سکھر ڈاکٹر کامران فضل ڈی آئی لاڑکانہ مظہر نواز شیخ ۔ رینجرز کے کرنل رائے جاوید اصغر ۔ ایس ایس پی امجد شیخ ڈپٹی کمشنر منور مٹھیانی شہریوں صحافیوں سول سوسائٹی کے لوگوں اور دیگر نے شرکت کی پولیس کے دستوں نے شہید پولیس اہلکار کو سلامی دیا گیا جبکہ شہید پولیس اہلکار سجاداحمد خاصخیلی جسد خاکی کو آبائی گاوٴں خیرپور روانہ کردیا گیا ہے ۔ جبکہ اس موقعہ پر آر پی او سکھر ڈاکٹر کامران فضل کی میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کچے کے علاقے میں جرائم پیشہ افراد ڈاکوں ۔ سبزوئی ۔ جاگیرانی ۔تیغانی گینگ کے خلاف سخت آپریشن کیا جائے رہا ہے ۔ آر پی او سکھر ڈاکٹر کامران فضل نے کہا کہ ہمیں کہیں پر کوئی رکاوٹ نہیں جہاں ہمیں پتہ چلے گا جرائم پیشہ افراد کون سے صف میں چھپا ہے ہم ان کے پیچھے چلے جائیں گے ۔کچے کا جنگل صاف ہو رہا ہے ہم ڈاکوں کو اب چھپنے نہیں دیں گے ۔ ڈاکٹر کامران فضل نے مزید کہا کہ شکارپور کے کچے میں خواتین اور بچے بھی ہیں ان کی جانوں کو بچاتے ہوئے جرائم پیشہ افراد کا خاتمہ کر رہے ہیں ۔ جبکہ ڈاکٹر کامران فضل نے کہا کہ چھوٹے موٹے ڈاکوؤں سے مقابلہ کرنے کے لیے پولیس کافی ہے ۔ انہونے بتایا کہ کچے میں آپریشن کے لیے بکتر بند ڈبل چادر گاڑیاں آچکی ہیں وہ آپریشن میں حصہ لے رہے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں