24

مقبوضہ جموں و کشمیر ، سوپور میں بھارتی فوجیوں نے تین کشمیری نوجوان شہید کردیئے

بھار ت کے غیر قانونی زیر تسلط جموں و کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے سوپور قصبہ میں اپنی ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی کے دوران مزید تین کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا ہے۔

 کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ان نوجوانوں کو قابض بھارتی فوج نے قصبہ میں جعلی مقابلے میں محاصرے اور تلاشی کارروائی کے دوران شہید کیا ۔ شہدا میں سے ایک کی شناخت مدثر پنڈت ساکن گنڈ براٹ کے طور پر ہوئی ۔ اطلاعات کے مطابق قابض انتظامیہ نے علاقے میں انٹرنیٹ اور موبائل فون سروسز معطل کردی ہیں ۔ آخری اطلاعات آنے تک علاقے کا محاصرہ جاری تھا۔

ادھر سوپور قصبے میں تلاشی اور محاصرے کی کارروائی ہفتے کی صبح شروع کی گئی تھی ۔بھارتی فوج کی 22 اور 52راشٹریہ رائفلز ، سینٹرل ریزرو پولیس فورس کی 178بٹالین اور اسپیشل آپریشن گروپ کے اہلکاروں نے پورے قصبے کا محاصرہ کر کے گھر گھر تلاشی کی کارروائی کی ۔ عینی شاہدین کے مطابق اس کارروائی میں ایک ہزار سے زائد فوجی گاڑیاں استعمال کی گئیں۔فوجیوں نے قصبے کے تمام داخلی اور خارجی مقامات کی ناکہ بندی کردی اور میڈیا کو بھی علاقے میں داخل ہونے کی اجازت نہیں تھی ۔ فوجیوں نے کارروائی کے دوران خواتین اور بچوں سمیت ہزار سے زائد لوگوں کو تشدد کا نشانہ بنایا جس سے 150 افراد زخمی ہو گئے جنہیں ہسپتال منتقل کردیاگیا ۔فوجیوں نے صحافیوں کو سوپور میں کارروائی کے بارے میں کوئی خبر جاری نہ کرنے کی  بھی ہدایت کی ۔ ہسپتال کی انتظامیہ اس حد تک خوفزدہ تھی کہ انہوںنے بھی زخمیوں کے بارے میں کوئی تفصیلات بتانے سے انکار کر دیا۔ سوپور قصبے کے مختلف علاقوں سے اہلکاروں نے دو درجن سے زیادہ کشمیری نوجوانوں کو گرفتار کرلیا جبکہ مقامی لوگوں سے پچاس سے زیادہ موبائل فون چھین لئے۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں