40

نوجوان کو غیر قانونی حوالات میں بند کرنے پر ایس ایچ او تھانہ کینٹ غفار خان اور محرر سمیت دیگر اہلکاروں سمیت پانچ افراد کے خلاف عدالت میں استغاثہ دائر 

ڈیرہ اسماعیل خان تھانہ کینٹ ڈیرہ میں تیس سالہ نوجوان آفتاب عالم کو غیر قانونی حراست میں لے کر حوالات میں بند کرنے پر ایس ایچ او تھانہ کینٹ غفار خان اور محرر سمیت دیگر اہلکاروں سمیت پانچ افراد کے خلاف عدالت میں استغاثہ زیر دفعات 427.447.448.457.506.109 ت پ اور آرٹیکل 155 پولیس آڈر 2002 کے تحت دائر کردیاگیا ،جوڈیشل مجسٹر یٹ i ڈیرہ نے ایس پی انوسٹی گیشن کو انکوائری مکمل کرکے قبل از تاریخ پیشی رپورٹ عدالت میں پیش کرنے کے احکامات جاری کردیئے ،مستغیث نوجوان آفتاب عالم کی جانب سے گل تیاز مروت ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے ،تفصیلات کے مطابق مدنی ٹاﺅن ڈیرہ کے رہائشی تیس سالہ نوجوان آفتاب عالم نے اپنے وکیل کے توسط سے عدالت میں استغاثہ دائر کیا جس میں اس نے موقف اختیار کیا کہ کینٹ پولیس نے مجھے 10.01.21 کوزیر دفعات 107/150 ض ف کے تحت چالا ن کیا لیکن پھر تھانہ کینٹ پولیس دوبارہ مورخہ 22.03.21 کو میرے گھر میں دیوار پھلانگ کر داخل ہوئی اورمجھے بلاکسی جرم و اندراج ایف آئی آر کے گرفتارکرکے حوالات میں بند کردیا جبکہ عدالت کی طرف سے حکم امتناعی جاری ہونے کے باوجود میرے مقبوضہ مکان کا قبضہ مخالف شاہ عالم کے حوالے کردیا جس کے خلاف توہین عدالت کی درخواست برخلاف حکم عدولی سول جج 13 ڈیرہ کی عدالت میں دائر کی گئی ہے ،مجھے حبس بے جا میں رکھنے کے خلاف میری بیوی نے ایڈیشنل سیشن جج 1 ڈیرہ کی عدالت میں درخواست زیر دفعہ 491 ض ف مورخہ 22.03.21 کو دائر کی،جس پر عدالت نے بیلف کو حکم دیا کہ مبحوس آفتاب عالم مذکور کو حوالات تھانہ کینٹ سے برآمد کرکے عدالت میں پیش کیا جائے ،بیلف عدالت کا پروانہ لے کر تھانہ کینٹ پہنچا تو مقامی پولیس نے قانونی چارہ جوئی سے بچنے کے لئے مجھے دوبارہ روبرو بیلف عدالت زیر دفعات 107.151.501 ض ف میں گرفتار ظاہر کرکے چوبیس گھنٹے مذید حوالات میں بند رکھا اور مورخہ 23.3.21 کو عدالت ایم او ڈی جوڈیشل مجسٹریٹ ڈیرہ پیش کیا جہاں سے دوبارہ ضمانت پر رہائی ملی ،مستغیث فریق نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ایس ایچ او تھانہ کینٹ سمیت دیگر پولیس اہلکاروں نے قانون کی خلاف ورزی کرکے تعزیرات پاکستان کے تحت جرائم سرزد کیے ہیں کیونکہ زیر دفعہ 107 ض ف کے استغاثہ میں حکم ایک سال کے لئے نافذ العمل ہوتاہے ،عدالت نے وکیل مستثیت کے دلائل سننے کے بعد ایس پی انوسٹی گیشن سے انکوائری کرانے اور اس کی رپورٹ آئندہ تاریخ پیشی 05.05.21 کو عدالت میں پیش کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں ۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں