60

کشمیریوں کی مرضی اور مشاورت کے بغیر کوئی حل ان پر ٹھونسنا بھارت کی مدد کرنا اور کشمیر کاز سے غداری کے مترادف ہے

*
قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے وزیراعظم عمران خان کی طرف آزاد کشمیر میں ریفرنڈم کی تجویز مسترد کردیا

سماجی روابط کی ویب سائٹ پر ٹویٹر پو میاں شہباز شریف نے کہا لہ
” ‏عمران نیازی آزاد کشمیر میں ریفرنڈم کی بات کر کے پاکستان کے تاریخی اور آئینی موقف سے انحراف کر رہے ہیں۔
تنازعہ جموں وکشمیر پر پاکستان کے تاریخی موقف اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں سے ہٹ کر کوئی بھی موقف ہم اور پوری قوم مسترد کرتی ہے۔
‏تنازعہ جموں وکشمیر کا فیصلہ اقوام متحدہ کی نگرانی میں شفاف آزادانہ استصواب رائے کے ناقابل تنسیخ حق سے ہوگا، پاکستان اور کشمیر کے عوام کا یہی موقف ہے اور
کشمیریوں کی مرضی اور مشاورت کے بغیر کوئی حل ان پر ٹھونسنا بھارت کی مدد کرنا اور کشمیر کاز سے غداری کے مترادف ہے! ‏عمران نیازی کے بیان سے وہ خدشات ثابت ہورہے ہیں جو 5 اگست 2019 کے بھارتی اقدامات سے قوم کے سامنے پہلے ہی آچکے ہیں

اس سے قبل عمران خان  نے کہا کہ میری حکومت ایک اور ریفرنڈم کرائے گی، کشمیری فیصلہ کریں گے پاکستان کے ساتھ رہنا ہے یا وہ آزاد رہنا چاہتے ہیں۔*

*کشمیر میں ریفرنڈم اسی وقت ہوگا جب مقبوضہ جموں و کشمیر وادی اور لداخ میں ریفرینڈم کروایا جائے گا اور وہاں کے لوگ بتائیں گے کہ انہوں نے انڈیا کے ساتھ رہنا ہے یا پاکستان کے ساتھ*
*لیکن یہاں پر عمران خان نے کشمیر کی تین حصوں میں تقسیم کرکے جموں کشمیر انڈیا کی گود میں ڈال کر اب آزاد کشمیر کے بارے میں عمران خان کہتے ہیں کہ ہم آزاد کشمیر میں ریفرنڈم کرائیں گے اور اور کشمیر کے لوگ پاکستان کے ساتھ رہنا چاہیے یا علیحدہ ان کی مرضی*
*مقبوضہ کشمیر کا سودا کرنے کے بعد لگتا ہے کہ عمران خان اب آزاد کشمیر کا سودا بھی کرنے جا رہے ہیں*
*جمیعت علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن اس پر کہتے ہیں*
*عمران خان کی تقریروں نے کشمیر فروشی کی تصدیق کردی۔*
*ایک بیان میں مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ عمران خان نے کشمیر فروشی کے ہمارے دعوؤں پر مہر ثبت کردی ہے۔*
*انہوں نے کہا کہ عمران خان نے کشمیر میں ریفرنڈم کی بات کی ہے جس سے کشمیر فروشی کے ہمارے دعوؤں کی تصدیق ہوگئی۔*
*مولانا فضل الرحمان نے مزید کہا کہ ریفرنڈم کی بات اقوام متحدہ کی کشمیر سے متعلق قراردادوں اور ریاست پاکستان کے مؤقف سے کھلا انحراف ہے۔*

*مسلم لیگ ن کے صدر میاں شہباز شریف شریف پیپلزپارٹی کے بلاول بھٹو زرداری نے عمران خان کے اس بیان کو مسترد کیا ہے*

*عمران خان کا یہ بیان اقوام متحدہ کی قراردادوں سے انحراف پاکستان اور کشمیریوں سے غداری کے مترادف ہے*

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں