76

آزاد کشمیر پولیس کے ایک کانسٹیبل کا عظیم کارنامہ 4 سال تک اپنے لئے جوتا نہ خریدا لیکن اپنے 4 بجوں کو ڈاکٹر بنادیا

آئی جی آزاد کشمیر سہیل تاجک نے سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹویٹر پر آزاد کشمیر پولیس کے ایک کانسٹیبل کو خراج تحسین پیش کیا جس نے 4 سال اپنے لئے جوتے خریدے لیکن اپنے 4 بجوں کا ڈاکٹر بنادیا

اپنے ایک ٹویٹ میں لکھا کہ ” ‏آزاد کشمیر پولیس میں ۳۰ سال سے کالنسٹبل ویٹر کا کام کرنے والا خوددار اور سفید پوش ملازم گل حسن کے 4 بچے ڈاکٹر ھیں-
مظفرآباد میں 2 کمروں کے زیر تعمیر مکان میں رہنے والا ملازم گل حسن نے اپنے لئے 4 سال بعد نئے جوتے خریدے مگر اپنے 4 بچوں کو اعلی تعلیم کے زیور سے آراستہ کیا۔*

‏محنت عظمت اور خودداری کی لازوال داستان

آزادکشمیر پولیس میں سال 1993میں کنسٹیبل ویٹر کے طو پر بھرتی ہونے والا ان پڑھ ،غریب اور سفید پوش ملازم گل حسن 4 ڈاکٹر بچوں کا باپ محکمہ پولیس آزادکشمیر میں گل حسن نام کا ایک ایسا کنسٹیبل ویٹر ملازم موجود ہے جو اپنی بیوی اور پانچ بچوں کے ساتھ مانک پیاں مہاجر کیمپ
‏مظفرآباد میں دو کمروں کے ایک زیر تعمیر چادر چھت والے مکان میں رہائش پزیر ہے۔تعلیمی لحاظ سے ان پڑھ اور مرکزی دفتر پولیس مظفرآباد میں تعینات ہے۔مزکور کے 4 بچے ( دو بیٹے اور دو بیٹیاں)ڈاکٹر ہیں۔
۔‏گل حسن نامی محکمہ پولیس کہ ملازم جو کہ ان پڑھ ، غریب مگر خود دار کنسٹیبل والد نے مسلسل محنت لگن اور سخت مشکلات کا مقابلہ کرتے ہوے اپنے بچون کو اعلی تعلیم دلا کر رہتی دنیا میں محنت عظمت اور خود داری کی ایک قابل تقلید لازوال مثال قائم کر دی ہے۔

۔ . سلام عظیم والدین

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں