84

وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے نادرا کی جانب سے غیر ملکی ایجنسیوں کا لوگوں کے جعلی دستاویزات بنائے جانے کا انکشاف

وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے نادرا کی جانب سے غیر ملکی ایجنسیوں کا لوگوں کے جعلی دستاویزات بنائے جانے کا انکشاف کر دیا۔
تفصیلات کے مطابق ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ عامر فاروقی نے کراچی میں پریس کانفرنس کے دوران نادرا سندھ کے 60 فیصد عملے کا بدعنوانی میں ملوث ہونے اور دہشت گردوں و علیحدگی پسندوں سمیت 40 لاکھ افراد کو جعلی شناختی کارڈز جاری کیے جانے کا انکشاف کیا۔اس کیس میں نادرا کراچی کے دو اسسٹنٹ ڈائریکٹرز کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔
نہوں ںے کہا کہ ایف آئی اے نے حساس اداروں کے ساتھ مل کر انکوائری کی ہے جس میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ نادرا ملازمین نے بڑے پیمانے پر سسٹم میں ٹیمپرنگ کی اور غیر قانونی طور پر غیر ملکیوں کو کارڈز جاری کیے، اس کیس میں نادرا کراچی کے دو اسسٹنٹ ڈائریکٹرز کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔جعلی دستاویزات کی وجہ سے ملک کو سیکیورٹی چیلنج کا سامنا ہے۔
ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ کے مطابق نادرا کے ڈیٹا بیس میں این ایف ایس اور ٹی ٹی پی کے لوگوں کو شامل کروایا گیا ہے جبکہ القاعدہ کے آپریٹرز نے اپنے لوگوں کے شناختی کارڈ بنوائے ہیں جن میں عبداللّہ بلوچ شامل ہے جس نے سلمان کے نام سے اپنا شناختی کارڈ بنوایا، بہت سارے برمی اور دیگر غیر ملکیوں کے جعلی شناختی کارڈ بنوانے کا بھی انکشاف ہوا ہے۔
ڈائریکٹر ایف آئی اے نے کہا کہ نادرا کے دو اسسٹنٹ ڈائریکٹر سمیت 3 ملزمان کو گرفتار کیا گیا ہے، ملزمان کے خلاف دہشت گردی ایکٹ اور نادرا قوانین کےتحت مقدمات درج کئےجائیں گے، ایف آئی اے حکام کی جانب سے تفتیش جاری ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں