66

چار سالہ بچی زیبا قتل کیس کا ڈراپ سین، سفاک ملزم سگا چچا نکلا

خانیوال: چار سالہ بچی زیبا قتل کیس کا ڈراپ سین، سفاک ملزم سگا چچا نکلا

خانیوال میں چار سالہ ننھی پری زیبا قتل کیس کا ڈراپ سین ہو گیا ہے۔ ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب کیپٹن ریٹائرڈ ظفر اقبال اعوان کا کہنا ہے کہ اس اندوہناک جرم میں کوئی اور نہیں بلکہ اس کا سگا چچا ملوث ہے۔

ایڈیشنل آئی جی ساؤتھ پنجاب ظفر اقبال نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس قتل کیس میں سفاک ملزم کو 24 گھنٹے میں گرفتار کرکے سامنے لے آئے ہیں، چار سالہ زیبا کا سفاک قاتل سگا چچا بنیامین ہے جو شادی شدہ اور ایک بیٹے کا باپ ہے۔

انہوں نے بتایا کہ بچی کے لاپتا ہونے کی اطلاع بھی ملزم چچا بنیامین نے ہی دی تھی، جو اسے بے دردی سے قتل کرنے کے بعد احتجاجی مظاہرے میں پیش پیش تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ ملزم میڈیا پر بچی کے قاتل کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کرتا رہا۔ سفاک قاتل نے تفتیش کے دوران ڈی پی او علی وسیم کو بتایا کہ اپنے بھائی اور بھابھی کے ساتھ رنجش کی بنا پر انھیں اذیت پہنچانے کیلئے اس نے یہ گھناؤنا فعل سرانجام دیا۔

ایڈیشنل آئی جی ساؤتھ پنجاب ظفر اقبال نے بتایا کہ سفاک قاتل بچی کی لاش کو رکشا میں لے کر کھیت میں پھینکنے گیا۔ ملزم نے زیادتی نہیں کی، اغوا کے پہلے روز ہی گلا دبا کر قتل کردیا تھا۔

‏وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار ‎@UsmanAKBuzdar نوٹس پر خانیوال پولیس کا فوری ایکشن
وزیراعلی عثمان بزدار کی خصوصی ہدایت پر خانیوال میں 4 سالہ بچی کے قتل کا کیس ٹریس
4 سالہ بچی کا قاتل گرفتار
قاتل معصوم بچی کا چچا نکلا
ملزم بنیامین نے قتل کا اعتراف کرلیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں