91

سنٹرل جیل ہری پور میں قید جمیعت علماء اسلام کے مرکزی رہنما اسیر ختم نبوت(مفتی کفایت اللہ) نے ریاستی اداروں کی ایماء پر جیل انتظامیہ کے شروع دن سے غیر انسانی اور غیر اخلاقی روپے کے خلاف 24 جون بروز جمعرات 7بجے صبح سے تادم مرگ بھوک ہڑتال شروع کر دی۔

سنٹرل جیل ہری پور میں قید جمیعت علماء اسلام کے مرکزی رہنما اسیر ختم نبوت(مفتی کفایت اللہ)
نے ریاستی اداروں کی ایماء پر جیل انتظامیہ کے شروع دن سے غیر انسانی اور غیر اخلاقی روپے کے خلاف 24 جون بروز جمعرات 7بجے صبح سے تادم مرگ بھوک ہڑتال شروع کر دی۔جیل سے ٹیلی فون پر اپنے بھائی اور بیٹے سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے انسانی حقوق کی تنظیموں سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔انہوں نے کہا کہ مفتی کفایت اللہ عارضہ قلب، شوگر، آنکھوں، دانتوں اور دیگر کئی امراض میں مبتلا ہیں۔ڈاکٹروں کی تجویز کردہ علاج میں تاخیر کی وجہ سے ان کی ایک آنکھ ضائع اور دوسری کے ضائع ہونے کا امکان ہے۔جبکہ دل، شوگر اور دانتوں کے ڈاکٹروں نے بھی مختلف علاج تجویز کئے ہیں لیکن علاج کی اجازت نہیں دی جا تی ۔اور نہ ہی ملاقات کی اجازت ہے جبکہ جیل مینول کے مطابق ان کے خلاف ایسا کوئی مقدمہ نہیں ہے۔جس میں ملاقات پر پابندی ہو۔یہ اقدامات صرف ریاستی اداروں اور جیل انتظامیہ کی بدمعاشی سے تعبیر کیا جاسکتا ہے۔مفتی کفایت اللہ کے بھائی قاضی حبیب الرحمن اور بیٹے حافظ حسین کفایت نے خبردار کیا ہے کہ اگر مفتی کفایت اللہ کو کچھ ہو گیا تو ذمہ دار جیل انتظامیہ اور ریاستی ادارے ہوں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں