97

وادی بدر میں جنگلات کی کٹائی زور و شور سے جاری۔

وادی بدر میں جنگلات کی کٹائی زور و شور سے جاری۔
گزشتہ دنوں وادی بدر کے نانوخیل مشران کی انتظامیہ اور محکمہ جنگلات کے وفد کے ساتھ آسمان مانزہ پر ملاقات ہوی جسکا مقصد جنگلات کی کٹائی کی روک تھام تھا ۔
لیکن بد قسمتی سے اس میٹنگ کے بعد جنگلات کی کٹائی میں تین گناہ اضافہ ہو چکا ہے ۔
وادی بدر نانو خیل مشران نے انتظامیہ اور محکمہ جنگلات سے ملاقات کے دوران وادی بدر میں جاری جنگلات کی کٹائی کو چھپانے کی کوشش کی ہے۔
اس بات کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ مشران نے بدر یوتھ ایسوسی ایشن کے نوجوانوں کو اس میٹنگ میں حصہ لینا پر نظر انداز کیا اور دوسری بات یہ کہ مشران نے مقامی سطح پر بلائے گئے جرگے کی تاریخ یکم جلائی رکھی جو کہ ایک لمبا عرصہ ہے۔
اگر مشران واقعہ ہی جنگلات کی کٹائی کی روک تھام چاہتے تو فورا ہی مقامی جرگہ بلاتے اور جنگلات کی کٹائی کی روک تھام کے لئے لائحہ عمل تیار کرتے ۔
قومی جرگہ کے لئے اتنا وقت دینا مقامی اور غیر مقامی لوگوں کو جنگلات کی کٹائی کا بھر پور موقع دینے کے مترادف ہے۔
موجودہ وقت میں وادی بدر میں مختلف مقامات پر جنگلات کی فروخت جاری ہے ۔
ایک مقامی شخص نے بتایا کہ یہاں پر ایک جنگل 11 لاکھ روپے میں فروخت ہوا۔ اس کے علاوہ مختلف جگہوں درختوں کے حساب سے مختلف ریٹ 5لاکھ ، 8 لاکھ وغیرہ میں بھی فروخت ہونے کی اطلاعات ہیں۔
وادی بدر کی نوجوان محکمہ جگلات اور انتطامیہ سے کٹائی کے روک تھام لے بارے میں ایکشن لینے کی درخواست کرتے ہیں ۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں