110

چارسدہ، پاکستان پیپلز پارٹی کے وفد کی ولی باغ چارسدہ آمد

عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کو توڑ دینے کے بعد اے این پی کے پاس راستہ جدا کرنےکے سوا کوئی چارہ نہیں تھا۔ شوکاز نوٹس جاری کرنا دراصل پی ڈی ایم کو توڑنے کا فیصلہ تھا۔جب ایک فیصلہ کیا گیا تو ہمارے پاس بھی دوسرا راستہ نہیں تھا ۔ولی باغ چارسدہ میں پیپلزپارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل نئیر بخاری، سینیٹر شیری رحمان اور دیگر قائدین کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے میاں افتخارحسین نے کہا کہ اپوزیشن اتحاد کامیابی کے ساتھ حکومت کے خلاف اور جمہوریت کی بحالی کیلئے جاری تھی لیکن نان ایشو کو ایشو بنا کر اتحاد کو توڑ دیا گیا۔پی ڈی ایم ایک سیاسی اتحاد تھا اور اگر کسی کو کوئی شکایت تھی تو سربراہی اجلاس بلایا جاتا۔ نہ جانے انہیں کس چیز کی جلدی تھی کہ شوکاز نوٹسز جاری کئے گئے۔ اے این پی نے اپنی 100سالہ تاریخ کو مدنظر رکھتے ہوئے یہ فیصلہ کیا ۔ میاں افتخارحسین نے کہا کہ شوکاز نوٹسزجاری کرنا اور پھر عوام کو یہ تاثر دینا کہ ایک سیاسی جماعت جمہوری جدوجہد پر یقین نہیں رکھتی، زیادتی ہے۔ جب شکایتیں بڑھیں تو بھی کسی نے مسائل حل کرنے کی کوشش نہیں کی۔ اے این پی تمام ہم خیال جماعتوں کے ساتھ مل کر جدوجہد جاری رکھے گی۔ پی ڈی ایم ہو یا نہ ہو اے این پی اس سلیکٹڈ اور جعلی مینڈیٹ کے ذریعے آنیوالی حکومت کے خلاف اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ ہم خیال جماعتوں کی جمہوریت کیلئے جدوجہد ہمیشہ جاری رہے گی اور مستقبل میں بھی اگر موقع آئے گا تو اے این پی صف اول کا کردار ادا کرے گی۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ یہ بات واضح ہونی چاہئیے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کو توڑا گیا جس کے بعد ہی اے این پی نے فیصلہ کیا کہ اب راہیں جدا ہونی چاہئیے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل نئیر بخاری کا کہنا تھا کہ ولی باغ آنے کا مقصد اے این پی سربراہ اسفندیارولی خان کی صحت دریافت کرنا تھا اور دیگر ملکی سیاسی صورتحال پر گفتگو ہوئی۔ ان کے مطابق اے این پی اور پیپلزپارٹی کے درمیان برسوں پرانا ایک نظریاتی رشتہ ہے۔ ماضی میں بھی پاکستان پیپلز پارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی اتحادی رہی ہیں اور دونوں پارٹیوں کے درمیان اچھی ہم آہنگی اور تعاون ہے اور امید کرتے ہیں کہ مستقبل میں بھی یہ رشتہ قائم رہے گا۔ اٹھارہویں آئینی ترمیم، صوبائی خودمختاری، صوبے کی شناخت، این ایف سی ایوارڈ اور دیگر قومی مسائل پر ہمیشہ اے این پی اور پیپلزپارٹی کا موقف ایک ہی رہا ہے اور آگے بھی دونوں جماعتیں اصولی موقف کے ساتھ جمہوری جدوجہد جاری رکھے گی۔ پاکستان پیپلز پارٹی کی سنٹرل ایکزیکٹیو اجلاس 11 اپریل کو کراچی میں منعقد ہورہا ہے جس میں پی پی پی مستقبل کے حوالے سے اہم فیصلے کرے گی۔انہوں نے کہا کہ ان کے نزدیک پی ڈی ایم کو ختم کردیا گیا اور اسے مزید پی ڈی ایم نہیں کہنا چاہئیے۔ قبل ازیں پاکستان پیپلزپارٹی کے وفد نے مرکزی سیکرٹری جنرل نئیر بخاری کی قیادت میں جمعرات کے روز ولی باغ چارسدہ کا دورہ کیا جہاں مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخارحسین ،مرکزی سیکرٹری مالیات سینیٹر حاجی ہدایت اللہ خان، صوبائی صدر ایمل ولی خان، صوبائی جنرل سیکرٹری سردارحسین بابک، صوبائی کلچر سیکرٹری خادم حسین، سینیٹر ارباب عمرفاروق کاسی، ایم پی اے شکیل احمد اور دیگر رہنمائوں نے ان کا استقبال کیا۔
چارسدہ، پاکستان پیپلز پارٹی کے وفد کی ولی باغ چارسدہ آمد
چارسدہ، پی پی پی وفد نے سیکرٹری جنرل نیئر بخاری کی قیادت میں ولی باغ کا دورہ کیا
چارسدہ، اے این پی کے سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین اورصوبائی صدر ایمل ولی خان سمیت دیگر قائدین نے وفد کا استقبال کیا
چارسدہ،پی پی پی وفد میں نئیر بخاری کے علاوہ سینیٹر شیری رحمان، ترجمان فیصل کریم کنڈی اور صوبائی صدر ہمایون خان شامل ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں