47

کرتارپور راہداری منصوبہ انسان دوستی اور بین المذاہب ہم آہنگی کی شاندار مثال ہے بھارت کی جانب سے سکھ یاتریوں کو پاکستان آنے سے روکنے کا معاملہ اعلی ٰ سطح اٹھایا جائے گا: سیکرٹری مذہبی امور

    کرتارپور راہداری منصوبہ انسان دوستی اور بین المذاہب ہم آہنگی کی شاندار مثال ہے
    بھارت کی جانب سے سکھ یاتریوں کو پاکستان آنے سے روکنے کا معاملہ اعلی ٰ سطح اٹھایا جائے گا: سیکرٹری مذہبی امور
    وفاقی سیکرٹری مذہبی امور سردار اعجاز خان جعفر کی زیر صدارت گردوارہ کرتاپور گورننگ کونسل کا چوتھا اجلاس

    اسلام آباد: کرتارپور راہداری منصوبہ انسان دوستی اور بین المذاہب ہم آہنگی کی شاندار مثال ہے۔ بھارت کی جانب سے سکھ یاتریوں کو پاکستان آنے سے روکنے کا معاملہ اعلی ٰ سطح اٹھایا جائے گا۔ یہ بات وفاقی سیکرٹری مذہبی امور سردار اعجاز خان جعفر نے آج وزارتِ مذہبی امور اسلام آباد میں گردوارہ کرتاپور گورننگ کونسل کا اجلاس کی صدارت کے موقع پر کہی ۔ تفصیلات کے مطابق اپنے نوعیت کے انوکھے اور انسان دوستی کی مثال کرتارپور راہداری منصوبے کے انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے گردوارہ کرتار پور گورننگ باڈی کا اجلاس کا چوتھا اجلاس آج وزارتِ مذہبی امور میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں وزارت کے شعبہ بین المذاہب ہم آہنگی کے افسران سمیت وزارتِ خارجہ، وزارتِ خزانہ ، وزارتِ داخلہ ، متروکہ وقف املاک بورڈ ، نادرا اور متعلقہ سیکورٹی اداروں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ اجلاس میں سکھ یاتریوں کو سہولیات کی فراہمی سے متعلق جاری ترقیاتی منصوبوں کی رفتار کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وفاقی سیکرٹری سردار اعجاز خان جعفر کا کہنا تھا کہ کرتارپور راہداری منصوبہ انسان دوستی اور بین المذاہب ہم آہنگی کی شاندار مثال ہے۔ ملکی وغیر ملکی سکھ یاتریوں کی خدمت ، سہولت اور رہنمائی کا نظام مزید بہتر کیا جا رہا ہے۔ مذہبی سیاحت کے فروغ کیلئے گوردوارہ کرتارپور کی رابطہ سڑکوں کو مزید بہتر کیا جا رہا ہے۔ مستقبل قریب میں اس منصوبے میں سرمایہ کاری کیلئے ملکی و غیر ملکی سرمایہ کاروں کو بہترین مواقع فراہم کئے جائیں گے۔ بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ بھارت نے ہندو یاتریوں پر مشتمل دو گروپ پاکستان بھیجے جبکہ سکھوں کو انکے مذہبی مقام ساکا گوردوارا کی یاترا سے روکنے کیلئے بہانے بنا کر انہیں پاکستان آنے سے روکا جا رہا ہے۔ اس پر سردار اعجاز خان جعفر نے کہا کہ مختلف مذاہب کیلئے دوہرا معیار نہیں ہونا چاہئے۔ بھارت کی جانب سے سکھ یاتریوں کو پاکستان آنے سے روکنے کا معاملہ اعلی ٰ سطح اٹھایا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں