61

منگل کے روز بلوچستان اور سندھ میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں سینیٹ کے انتخابات میں دو ہفتے قبل  تحریک انصاف کا صفا ہوگیا

منگل کے روز بلوچستان اور سندھ میں ہونے والے ضمنی انتخابات میں سینیٹ کے انتخابات میں دو ہفتے قبل  تحریک انصاف کا صفا ہوگیا
سندھ کے سانگھڑ اور کراچی میں  2 حلقوں میں اور بلوچستان
سندھ کے حلقہ  ہشین میں حکمران جماعت کو عبرتناک شکست کا سامنا کرنا پڑا

پی ایس 43 سانگھڑ کے تمام 132 پولنگ سٹیشنز کے غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق پیپلز پارٹی کے جام شبیر علی 45 ہزار 240 ووٹ لے کر کامیاب قرار پائے ہیں۔غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق پی ٹی آئی کے مشتاق جونیجو نے 5 ہزار 230 ووٹ حاصل کیے اور دوسرے نمبر پر رہےپاکستان پیپلزپارٹی نے سندھ اسمبلی کے حلقہ پی ایس 43 سانگھڑ اور پی ایس 88 ملیر کے ضمنی انتخاب میں میدان مار لیا جبکہ بلوچستان اسمبلی کی نشست پی بی 20 پر ضمنی انتخاب کے اب تک کے نتائج کے مطابق جمعیت علمائے اسلام کے امیدوار کو برتری حاصل ہے۔

سندھ اسمبلی کی  2 نشستوں پی ایس 43 سانگھڑ اور  پی ایس 88 ملیر  جبکہ بلوچستان کے ضلع پشین کی نشست پی بی 20 پر ضمنی انتخاب ہوا۔

پولنگ کا عمل صبح 8 بجے سے شام 5 بجے تک بلاتعطل جاری رہا۔

اب تک کے غیر حتمی و غیر سرکاری نتائج کے مطابق سندھ  کے ضمنی انتخاب میں پیپلزپارٹی نے میدان مار لیا ہے

سندھ اسمبلی کی نشست پی ایس43 سانگھڑ کے تمام 132 پولنگ اسٹیشن کے غیر حتمی و غیر سرکاری نتیجے کے مطابق پاکستان پیپلزپارٹی کے امیدوار جام شبیر علی خان 49 ہزار 571  ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے ہیں۔

غیر حتمی و غیر سرکاری نتیجے کے مطابق تحریک انصاف کےمشتاق جونیجو 6 ہزار 931  ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ 

اُدھر ملیر کے حلقے پی ایس 88 میں بھی پیپلزپارٹی نے کامیابی حاصل کرلی ہے جس کی تصدیق وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے بھی کردی ہے۔ 

بلوچستان اسمبلی کے حلقہ پی بی 20 پشین تھری پر ضمنی انتخابات ،پی ڈی ایم کے مشترکہ امیدوار نے میدان مار لیا۔غیر سرکاری و غیر حتمی نتائج کے مطابق منگل کو بلوچستان اسمبلی کے حلقہ پی بی 20 پشین تھری سے کامیاب ہونے والے سید فضل آغا کی وفات سے خالی ہونے نشست پر انتخابات کروائے گئے پی بی 20 کے پولنگ اسٹیشن نمبر 57 کے بوتھ نمبر 1 میں اس ضمنی انتخابات کا پہلا ووٹ کاسٹ کیا گیا،  جمعیت علما اسلام کے رکن و سابق گورنر بلوچستان سید فضل آغا کی وفات کے باعث خالی ہونے والی بلوچستان اسمبلی کے حلقہ پی بی 20پشین تھری پر ضمنی انتخاب کے لئے پولنگ کا بدھ کے روز صبح 8سے شام 5بجے تک بغیر کسی وقفے کے جاری رہا پولنگ کے لئے متعلقہ سامان ریٹرننگ آفیسر محمدحسن کی نگرانی میں پولنگ سٹاف کے حوالے کیا گیا۔انتخابات میں میں سیاسی جماعتوں سمیت آزاد امیدواروں کی جانب سے انتخابی سرگرمیاں آخری اختتام پذیر ہو گئیں، ڈھائی لاکھ سے زائد آبادی پر مشتمل یہ حلقہ جو ضلع پشین کی دو تحصیلوں حرمزئی اور سرانان پر مشتمل ہیں میں کلی حرمزئی، شنغرئی، شکرزئی، سیمزئی، علی زئی، ملیزئی، کربلا،ہیکلزئی،سرانان بٹے زئی، اجرم اور بادیزئی سمیت دیگر علاقے شامل ہیں۔ جبکہ اس حلقے کے کل ووٹرز کی تعداد 99849ہے۔جن میں سے 58126مرد اور 41723خواتین ووٹرز ہیں۔اس انتخابی حلقے میں ٹوٹل 113پولنگ اسٹیشن ہیں، جس میں 45مردانہ، 37زنانہ اور 31مشترکہ پولنگ اسٹیشن ہیں۔انتخابات میں کل 27 امیدوار وں نے حصہ لیا113پولنگ اسٹیشنز میں سے  تین پولنگ اسٹیشنز انتہائی حساس، 90حساس اور 20 نارمل قراردئیے گئے تھے ۔ضمنی الیکشن کیلئے سخت سکیورٹی انتظامات کیے گئے تھے ،پولنگ کے عمل کے دوران میں 450 ایف سی اور 510 لیویز اہلکار تعینات کیے گئے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں