63

جسٹس قاضی فائز عیسی نے بنچ سے متعلق اہم سوالات اٹھا دئیے انہوں نے تحریری طور پر اعتراضات لکھ دئے رجسٹرار سپریم کورٹ کو خط

‏جسٹس قاضی فائز عیسی نے بنچ سے متعلق اہم سوالات اٹھا دئیے انہوں نے تحریری طور پر اعتراضات لکھ دئےجسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا رجسٹرار سپریم کورٹ کو خط انہوں نے کہا کہ میں بینچ میں شامل تھا، پریکٹس کے مطابق کیس کی فائل مجھے نہیں بھجوائی گئی اور فیصلہ میڈیا کو جاری کر دیا گیا۔مجھے فیصلے سے اتفاق یا اختلاف کا حق بھی نہیں دیا گیا: جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا رجسٹرار سپریم کورٹ کو خط

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا رجسٹرار سپریم کورٹ کو خط

کیس کے تحریری فیصلے کی کاپی مجھے نہیں دی گئی،جسٹس قاضی فائز عیسیٰ
سپریم کورٹ آف پاکستان میں وزیرِ اعظم عمران خان کی جانب سے ارکانِ اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز جاری کرنے سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے رجسٹرار سے فیصلے کی کاپی طلب کر لی۔جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے سوال کیا کہ مجھے کاپی فراہم کرنے سے پہلے میڈیا کو کیسے دے دی گئی؟ فیصلہ میڈیا کو جاری کرنے کا آرڈر کس نے دیا؟
انہوں نے یہ بھی کہا کہ مجھ سے پہلے میڈیا کے ذریعے کیس کے فیصلے سے پوری دنیا کو پتا چل چکا تھا، مجھے کیوں اس فیصلے سے اتفاق یا اختلاف کا موقع فراہم نہیں کیا گیا؟عدالتی روایت کے مطابق بینچ کا حصہ بننے والے ججز کو فیصلے کی کاپی دی جاتی ہے،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں