30

وفاق اور آزاد کشمیر حکومت کے درمیان ’اختیارات کی جنگ‘ کی اندرونی کہانی

آزاد کشمیر کا الیکشن چوری کرنے کا مبصوبہ 5 ارب روپے وفاقی وزیر امور کشمیر کی صوابدید پر رکھ دئیے وفاق اور آزاد کشمیر حکومت کے درمیان ’اختیارات کی جنگ‘ کی اندرونی کہانی

ذرائع کے مطابق آزاد کشمیر حکومت نے مبینہ غیر قانونی اقدامات ختم کرنے کیلئے وفاق کو 25 جون کی ڈیڈ لائن دی ہے اور آزاد کشمیر حکومت کا مؤقف ہے کہ وفاق کی مبینہ مداخلت کی وجہ سے آزاد کشمیر کابینہ نے بجٹ کی منظوری نہیں دی، تاریخ میں پہلی مرتبہ بجٹ پیش کیے بغیر اسپیکر نے اسمبلی اجلاس ملتوی کردیا۔

وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر نے کہا ہے کہ وفاق نے ہمارے بجٹ سے 5 ارب روپے وزیر امور کشمیر کو دیدیے اور انتخابات میں تحریک انصاف کے امیدواروں میں 5 ارب روپے تقسیم کیے جائیں گے جب کہ گزشتہ بجٹ میں منظور شدہ منصوبے روک کر ربوں روپے لیپس کیے جارہے ہیں، توانائی کے میگا پراجیکٹ پر فکسڈ ٹیکس ہمارے حقوق پر ڈاکا ہے۔

آزاد کشمیر کابینہ کا کہنا ہےکہ وفاقی حکومت کے غیر آئینی اقدامات کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔

مسلم لیگ ن آزاد کشمیر اسمبلی میں اپنا آخری بجٹ پیش نہ کر سکی……
مسلم کانفرنس کے رکن اسمبلی ملک نواز کا اسمبلی اجلاس میں جان بوجھ کر بجٹ نہ پیش کرنے پر شدید احتجاج……

مظفرآباد
آزادکشمیر حکومت اپنا آخری بجٹ آج ایوان میں پیش نہ کر سکی آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی کا اجلاس سپیکر شاہ غلام قادر کی زیر صدارت شروع ہونے والا اجلاس صرف وزیراعظم آزاد کشمیر اور قائد ایوان راجہ فاروق حیدر کا مختصر خطاب وفاقی حکومت پر تحفظات کا اظہار کرنے کے بعد اجلاس ملتوی کر دیا گیا ایوان میں موجود اکلوتے اپوزیشن رکن ملک نواز نے اجلاس ملتوی کرنے کی مخالفت کی اجلاس شروع ہونے کے بعد بجٹ پیش کرنے کے بجائے وزیراعظم آزادکشمیر کی تقریر شروع ہوئی تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم آزاد کشمیر  نے پاکستان کی مرکزی حکومت  کیساتھ معاملات پر تحفظات کا اظہار رکھتے ہوئے اجلاس موخر کرنے کی تجویز دے دی اپوزیشن بینچ پر بیٹھے اکلوتے ممبر اسمبلی کوٹلی مسلم کانفرنس ملک نواز نے اجلاس موخر کرنےکی مخالفت کر دی ملک نواز نے وزیراعظم کی تجویز پر کہا کہ ہم اتنے دور سے سفر کرکے بجٹ اجلاس میں شرکت کیلئے آئے ہیں آج کا دن بجت کیلئے مختص ہے بجٹ پیش ہونا چاہیئے اگر کوئی معاملات تھے تو آپ اتنا عرصہ کیوں خاموش رہے وفاق سے معاملات یخسو کرواتے آپ تو وہی وزیراعظم ہیں جنہوں نے ان کیمرہ سٹنگ میں آنے سے قبل کہا تھا کہ میں آخری وزیراعظم ہوں لیکن ان کیمرہ سٹنگ میں آکر آپ خاموش ہو گئے آج الیکشن سر پر ہے تو آپ کا یہ واویلا سمجھ سے بالاتر ہے جس کے بعد اسپیکر اسمبلی نے بجٹ اجلاس غیر معائینہ مدت کے لیے ملتوی کر دیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں