50

افغانستان میں قیام امن کیلئےپاک افغان سعودی علماءکانفرنس؛ 14 نکاتی‘ افغانستان امن اعلامیہ’جاری رابطہ عالم اسلامی کےزیرانتظام مکہ مکرمہ میں کامیاب کانفرنس اسلام آباداورکابل سےعلما کرام کی ویڈیولنک سےشرکت

(اسلام آباد: 10 جون، 2021) افغانستان میں قیام امن کیلئے پاک افغان و سعودی علماء کانفرنس کا کامیاب اختتام؛ 14 نکاتی‘افغانستان امن اعلامیہ’ جاری کر دیا گیا۔ رابطہ عالم اسلامی کے زیر انتظام مکہ مکرمہ میں منعقدہ کانفرنس میں پاکستان سے وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری کی قیادت میں چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل ڈاکٹر قبلہ ایاز ، سعودی عرب میں پاکستانی سفیر بلال اکبر اور او آئی سی میں پاکستان کے مستقل مندوب رضوان سعید شیخ نے شرکت کی۔ اسلام آباد اور کابل سے متعدد علما کرام ویڈیو لنک کے ذریعے شریک ہوئے۔ تفصیلات کے مطابق کانفرنس کا مقصد افغانستان میں قیام امن و استحکام کی کوششوں میں ساتھ دینا تھا۔ کانفرنس میں پیر نور الحق قادری کے خصوصی خطاب کے علاوہ پاکستانی سفیر جنرل (ر) بلال اکبر، پاکستان کے او آئی سی کے مستقل مندوب رضوان سعید شیخ، سیکرٹری جنرل رابطہ عالم اسلامی محمد بن عب الکریم عیسی نے خطاب کیا۔ پاکستان سے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کرنے والے علما کرام میں مفتی تقی عثمانی ، حافظ طاہر محمود اشرفی، مولانا عبد الخبیر آزاد، پروفیسر ساجد میر، مولانا محمد حنیف جالندھری، مولانا عبد المالک، علامہ افتخار حسین نقوی، مولانا محمد شریف سیالوی، مولانا راغب نعیمی، مولانا عبد الکریم، مولانا فضل الرحمن خلیل ، مولانا حامد الحق، یوسف الدرویش، مفتی عبد الرحیم، پیر سید علی رضا بخاری اور مولانا قطب نے شرکت کی۔ مشترکہ اعلامیہ میں مذکرات کی حمایت، علاقے میں امن ، رواداری، اعتدال و اصلاح کا رستہ اختیار کرنے پر زور دیا گیا۔ تمام مسلمان ایک جسم کی مانند ہیں، ان میں مفاہمت کی کوشش حکم خداوندی اور حکم ِنبوی ﷺ ہے لہذا ہر مسلمان کی ذمہ داری ہے۔ علما کرام پوری دنیا بالخصوص افغانستان میں اسلامی و انسانی اخوت کے فروغ کی کوشش کریں گے۔ اس ضمن میں دونوں ملکوں کے علمائے کرام پر مشتمل ایک باڈی تشکیل دی جائے گی۔ تشدد کو کسی ایک مذہب ، قوم، تہذیب یا نسل سے جوڑنے کی حوصلہ شکنی کی جائے۔ خود کش حملے اسلامی اصولوں کے منافی ہیں۔ اعلامیہ کے مطابق تمام متحارب گروہوں کو قیام امن کیلئے مذاکرات کی دعوت دی گئی ہے جبکہ اس تمام عمل میں دونوں ملکوں کے علمائے کرام موثر کردار ادا کرینگے۔ اعلامیہ کے آخر میں پاکستان اور سعودی عرب کو افغان امن کی کوششوں پرخراج تحسین پیش کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں