60

سول ہسپتال پروآ میں رات کے وقت موبائل ٹارچ کی روشنی میں حادثہ میں زخمی بچی کے علاج کی تصویر نے” صحت انصاف” اور منتخب نمائندوں کی کارکردگی پر سوال اٹھا دیئے

ڈیرہ اسماعیل خان :سو شل میڈیا پرسول ہسپتال پروآ میں رات کے وقت موبائل ٹارچ کی روشنی میں حادثہ میں زخمی بچی کے علاج کی تصویر نے” صحت انصاف” اور منتخب نمائندوں کی کارکردگی پر سوال اٹھا دیئے ۔تفصیلات کے مطابق، سات یونین کونسل پر مشتمل تحصیل پروآ کے وسیع ترین آبادی کے اکلوتے اسپتال میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ اورجنریٹر کی سہولت موجود نہ ہونے پر گزشتہ روز ایک معصوم بچی جوموٹرسائیکل کی ٹکر سے زخمی ہو گئی تھی کو فوری طبی امداد کیلئے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال پروآسپتال لایا گیاجہاں اندھیرے اور روشنی کا مناسب انتظام نہ ہونے پر مجبوراً میڈیکل عملے نے موبائل سے ٹارچ کی روشنی میں زخمی بچی کو ٹانکے لگائے۔ موبائل ٹارچ کی روشنی میں بچی کے علاج کی تصویروں نے سوشل میڈیا پر بحث چھیڑ دی ہے ۔ معززین علاقہ کا کہنا تھا کہ بلند و بانگ دعوے کرنے والے ممبران قومی و صوبائی تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال پروآکے چند بنیادی مسائل حل کرنا تو درکنار ایک جنریٹر بھی ہسپتال میں نہ دے سکے ۔ اس حوالے سے صوبائی حکومت اور محکمہ صحت کے حکام سے فوری نوٹس کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں