175

امیگریشن حکام نے شہباز شریف کو ائیرپورٹ پر روک لیا ہمارے سسٹم میں آپ ابھی تک بلیک لسٹ ہیں

امیگریشن حکام نے شہباز شریف کو ائیرپورٹ پر روک لیا
ہمارے سسٹم میں آپ ابھی تک بلیک لسٹ ہیں، امیگریشن حکام ذرائع
لاہور ہائیکورٹ کا آرڈر ہے، ون ٹائم ٹریول کی اجازت دی، شہباز شریف

سینئر صحافی سلمان غنی کا کہنا ہے کہ ‏ایف آئ اے نے شھباز شریف کا ائیر پورٹ پر باھر جانے سے روک دیا اور کہا کہ ھمارے سسٹم میں اپ کا نام اپ گریڈ نھیں ھوا۔ اب روانگی سے بڑا سوال تو یہ کھڑا ھو گیا ھے کہ آخر حکومتی سسٹم میی شھباز شریف کا نام کیوں اپ لوڈ نھیں ھو رھا کب تک روکنا ممکن ھو گا۔

ایجنسیوں کے ٹائوٹ اینکر کا تبصرہ دلچسپ ہے

لاہور  ہائیکورٹ کی جانب سے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو علاج کی غرض سے بیرون ملک جانے کی مشروط اجازت پر حکمران جماعت نے شدید تنقید کی ہے۔اپنے ردعمل میں وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ اس طرح سے ان کا فرار ہونا بدقسمتی ہو گی، شہبازشریف اس سے پہلے نواز شریف کی واپسی کی گارنٹی دے چکے ہیں ، سوال یہ ہے کہ شہباز شریف کی اس گارنٹی کا کیا بنا؟انہوں نے کہا کہ شہباز شریف کو باہر جانے کی اجازت دینا قانون کے ساتھ مذاق ہے ، اتنی جلدی  فیصلہ تو پنچائت میں بھی نہیں ہوتا۔ فواد چوہدری نے کہا کہ فیصلے کے خلاف تمام قانونی راستے اختیار کریں گے، وزیراعظم نظام عدل کی کمزوریوں کی کئی بار نشاندہی کر چکے ہیں ، اپوزیشن انتخابی اصلاحات پر تیار نہیں ، اس کی بڑی وجہ اس بوسیدہ نظام سے ان کے مفاد وابستہ ہیں

شہباز شریف کو پاکستان کی گرمی ستارہی ہے، محلوں میں جانے کو دل مچل رہا ہے، فردوس عاشق

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ شہباز شریف سے متعلق عدالتی فیصلے پر اپنی حکمت عملی طے کریں گے کہ مافیاز کا کیسے مقابلہ کرنا ہے۔

اپنے بیان میں فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھاکہ شہباز شریف کو پاکستان کی گرمی ستارہی ہے، ان کا محلوں میں جانے کو دل مچل رہا ہے۔

ان کا کہنا تھاکہ عدالتی فیصلے پر اپنی حکمت عملی طے کریں گے کہ مافیاز کا کیسے مقابلہ کرنا ہے۔

خیال رہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے مسلم لیگ (ن) کے صدر و قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کو 8 مئی سے 5 جولائی تک بیرون ملک جانے کی اجازت دے دی ہے۔
وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے سماجی روابط کی ویب سائٹ پر ٹویٹر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ‏شہباز شریف کی بیرون ملک روانگی کی اجازت حیران کن فیصلہ ہے۔پہلے بھائی کی جھوٹی ضمانت دی اسے باہر بھاگنے میں مدد دی جو کبھی واپس نہیں آئے-اب وہ مفرور قرار ہیں۔کیا انہیں ایک مفرور کی معاونت میں اندر نہیں ہونا چاہیے تھا۔ 35 سال کی حکومت میں ایک ہسپتال ایسا نہیں جہاں ان کا علاج ہو سکے
‏یہ تھا وہ ضمانت نامہ۔ جس پر بھائی کو فرار کروایا جو کبھی لوٹ کر نہ آیا۔ اور اب خود بھی فرار ہونے کو ہیں۔ کیا ان کا علاج کسی پاکستانی ہسپتال میں نہیں ہو سکتا ؟ کسی بار قوم کو دھوکہ دیں گے یہ لوگ۔ کتنا جھوٹ بولیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں