142

اغوا کا مقدمہ درج نہ کرنے پر وزیراعلی خیبرپختونخواہ کے رشتہ دار ایس ایچ او حیات آباد کو معطل کر دیا گیا

اغوا کا مقدمہ درج نہ کرنے پر وزیراعلی خیبرپختونخوا کے رشتہ دار ایس ایچ او حیات آباد کو معطل کر دیا گیا ہے۔ حیات آباد تھانہ کے ذریعے افغانستان سے سمگل شدہ سامان بحفاظت پشاور اور ملک کے دیگر حصوں میں منتقل ہوتا ہے معلوم ہوا ہے کہ گزشتہ روز حیات آباد کی حدود میں ایک شخص کی اغوا کی رپورٹ درج نہ کرنے پر وزیراعلی خیبرپختونخواہ محمود خان کے رشتہ دار ایس ایچ او حیات آباد محمد علی کو معطل کر دیا گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ معطل ہونے والے ایس ایچ او کو تھانہ حیات آباد پر سب سے ذیادہ عرصے تک تعینات ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔ جس کو وزیراعلی خیبرپختونخواہ کے حکم پر راتوں رات سوات سے پشاور اور پھر اسی وقت حیات آباد تھانے کا ایس ایچ او تعینات کیا گیا تھا۔ سی پی او ذرائع نے بتایا کہ ایس ایچ او کے معطل ہوتے ہی وزیراعلی خیبرپختونخوا کی جانب سے آئی جی پی کو ٹیلی فون کال موصول ہوئی جس پر آئی جی پی نے وزیراعلی کو معذرت کی ہے اور کہا کہ معاملہ ٹھنڈا ہونے دیں تب تک میں محمد علی کو دوبارہ کسی اچھے تھانے پر تعینات کر دوں گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں