49

بلوچستان کا سیاسی بحران مزید گہرا ہوگیا سردار صالح بھوتانی نے وزارت سے استعفی دے دیا

بلوچستان کا سیاسی بحران مزید گہرا ہوگیا کوئٹہ: سردار صالح بھوتانی نےلوکل گورنمنٹ بلوچستان کے وزارت سے استعفی دے دیا
کوئٹہ:  سردار صالح بھوتانی نےلوکل گورنمنٹ بلوچستان کے وزارت سے استعفی دے دیا۔ 
وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کا صوبائی کابینہ میں ردو بدل کا فیصلہ صوبائی کابینہ میں نئے اراکین کو شامل کرنے اور پرانے وزرا کا قلمبدان بھی تبدیل کرنے کا فیصلہ وزیراعلیٰ بلوچستان صوبائی وزرا سردار صالح بھوتانی اور سردار یار محمد رند کی کارکردگی سے ناخوش وزیراعلیٰ جام کمال۔خان نے سردار صالح بھوتانی سے وزارت کا قلمبدان واپس لے لیا۔
صوبائی وزیر یار محمد رند کا بھی صوبائی حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ
صوبائی وزیر سردار محمد صالح بھوتانی ردعمل
محکمہ بلدیات کا قلم دان لینے سے پہلے مشاورت یا اعتماد میں نہیں لیا گیا  قلم دان واپس لینے کے بعد کی صورتحال سے سنیئر ساتھیوں سے رابطے میں ہوں  سنیئر ساتھیوں اور دوستوں سے مشاورت کے بعد آئندہ کے لائحہ عمل کا فیصلہ اور اعلان کرونگا ،
بلوچستان حکومت کے ترجمان لیاقت شاہوانی کے مطابق ‏وزیراعلی بلوچستان ‎جام کمال کیجانب سے ‎#کابینہ میں مزید ردوبدل یا چند وزراء کو عہدوں سے ہٹایے جانے کی بےبنیاد افواہوں میں صداقت نہیں

بلوچستان کابینہ بہترین انداز میں حکومتی امور انجام دے رہی ہے،وزراء کی کارکردگی اطمینان بخش ہے
صرف وزیر بلدیات کو ہٹائے جانےکامطلب مذید تبدیلی نہیں

*گورنر بلوچستان جسٹس (ر) امان اللہ یاسین زئی صدرمملکت کی ایڈوائس کے بعد عہدے سے مستعفی ہوں گے*

*پی ٹی آئی کے پارلیمانی گروپ نے ڈاکٹر امیر محمد خان جوگیزئی ‘ نوابزادہ ہمایوں جوگیزئی ‘ ظہور آغا اور احمد خان غیبزئی کے ناموں کا پینل وزیر اعظم کو ارسال کردیا‘باقاعدہ اعلان ایک دو روز میں متوقع‘ذرائع*
تحریک انصاف بلوچستان کے پارلیمانی گروپ نے بلوچستان کے نئے گورنر کی تعیناتی کے لیے وزیر اعظم کو چار ناموں پر مشتمل پینل پیش کر دیا ہے عمران خان آج پینل میں شامل چار ناموں کا جائزہ لے کر حتمی فیصلہ کرینگے جس کا باقاعدہ اعلان ایک دو روز میں متوقع ہے۔ جبکہ موجودہ گورنر جسٹس امان اللہ یاسین زئی نے وزیر اعظم کا خط ملنے کے بعد اپنا بوریا بستر باندھنا شروع کردیا ہے اور اپنے تحفظات کا اظہار کیا ہے کہ ان سے استعفی وزیر اعظم نہیں صدر طلب کر سکتا ہے۔ لہذا قانونی تقاضہ پورا کرتے ہوئے صدر مملکت انہیں استعفے کی ایڈوائس جاری کرے جس کے بعد وہ عہدے سے سبکدوش ہو جائیں گے۔ دوسری جانب ذرائع نے بتایا ہے کہ ڈاکٹر امیر محمد خان جوگیزئی گورنر شپ کیلئے ہارٹ فیورٹ ہیں انہیں26اگست2018میں بھی گورنر بلوچستان کے عہدے کیلئے نامزد کیا گیا تھا لیکن نیب میںمتعدد کیسز کے باعث اُن کی تقرری نہیں ہو سکی تھی۔ذرائع نے بتایا کہ گورنر شپ کیلئے پینل میں جن تین امیدواروں کے نام دئیے گئے ہیں ان میں محمد خان غیبزئی ‘ظہور آغا اور ہمایوں جوگیزئی شامل ہیں۔احمد خان غیبزئی قبائل کے سربرا ہ ہیں جو گزشتہ دنوں طویل جلا وطنی ختم کر کے وطن واپس پہنچے تھے جس کے ساتھ ہی انہیں گورنر بنانیکی خبریں سامنے آ رہی تھیں نوابزادہ ہمایوں جوگیزئی بلوچستان پولیس میںگریڈ 21کے افسر رہ چکے ہیں اور 2009میں60سال کی عمر میں پہنچنے کے بعد وہ سرکاری ملازمت سے سبکدوش ہو گئے تھے اور پھر چند سال بعد پی ٹی آئی میں شمولیت کر لی تھی ۔ ظہور آغا بزنس مین اور ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری کے قریبی دوست ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں