15

کرپٹ مافیا کو نشان عبرت بنا دیا جائے گا ، کسی صورت میں بدعنوان افراد کو این آر او نہیں دیا جائے گا عمران خان

اٹک وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت اپنے منشور پر عمل پیرا ہے ، کرپٹ مافیا کو نشان عبرت بنا دیا جائے گا ، کسی صورت میں بدعنوان افراد کو این آر او نہیں دیا جائے گا ، نچلی سطح پر سرکاری افسران کی لوٹ کھسوٹ ، صوابدیدی اختیارات کی آڑ میں کی جانے والی کرپشن ، بدعنوانی اور عوام کو اذیت میں مبتلا کرنے والے افسران کی جانچ پڑتال کیلئے حکومت نے ایک واضح نظام تشکیل دیا ہے اور جلد ہی بدعنوان ، کام چور ، سرکاری امور میں التوا اور رخنہ ڈالنے والے افسران کو ان کی کارکردگی کی بنیاد پر تعینات کیا جائے گا اور بہت سے افسران سے باز پرس کا عمل شروع کر دیا گیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیر اعظم سیکرٹریٹ میں اٹک سے رکن قومی اسمبلی میجر طاہر صادق سے خصوصی ملاقات کے موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار ، وزیر اعظم کے سیکرٹری رانا اکبر حیات اور ملٹری سیکرٹری بھی موجود تھے رکن قومی اسمبلی میجر طاہر صادق نے وزیر اعظم کو مہنگائی ، بے روزگاری اور عام آدمی کو جن مسائل کا سامنا ہے اس بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا انہوں نے ضلع اٹک کی تعمیر و ترقی کیلئے مختلف ترقیاتی پروجیکٹس کے حوالہ سے بھی بات چیت کی انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ عوام اس وقت انتہائی مشکلات کا شکار ہے حکومت بالخصوص غریب اور مستحق طبقے کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرے کرپشن کے حوالہ سے بھی انہوں نے وزیر اعظم کو ٹھوس شوائد سے آگاہ کیا انہوں نے کہا کہ ضلع اور تحصیل کی سطح پر کرپشن میں جو اضافہ ہوا ہے اور افسران جعلی کارکردگی ظاہر کرنے کیلئے وٹس ایپ کے ذریعے جو تصاویر بھیج کر اپنی کارکردگی ظاہر کر رہے ہیں اس کا حقیقت سے دور کا بھی تعلق نہیں ہوتا میجر طاہر صادق نے وزیر اعظم عمران خان سے شکایت کی کہ انہوں نے اٹک میں ملازمتوں میں میرٹ کی خلاف ورزیوں سے آگاہ کیا تھا جس پر انہوں نے چیف سیکرٹری پنجاب کو ہدایت کی تھی کہ ملازمتوں میں کسی صورت میں کوٹہ سسٹم نہ رکھا جائے اور میرٹ کو اولیت دی جائے تاہم اٹک میں آپس کی بندربانٹ اور افسران کی اقرباء پروری نے تحریک انصاف کے منشور کو داغ دار کرنے کی بھرپور کوشش کی ہے اس پر انہوں نے حالیہ دنوں میں سی ای او ایجوکیشن ڈاکٹر جاوید اقبال اعوان کی جانب سے اپنے خاندان کے تین افراد سمیت دیگر سفارشی افراد کو بھرتی کرنے کے حوالہ سے آگاہ کیا تو وزیر اعظم کی ہدایت پر فوری طور پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے سی ای او ایجوکیشن اٹک ڈاکٹر جاوید اقبال اعوان کو فوری طور پر اٹک سے ٹرانسفر کر کے لاہور رپورٹ کرنے کی ہدایت جاری کی یاد رہے کہ سی ای او ایجوکیشن اٹک ڈاکٹر جاوید اقبال اعوان نے اپنے خاندان کے تین افراد کو محکمہ تعلیم اٹک میں بھرتی کر لیا تھا ان کے خلاف متعدد افراد نے احتجاج کیا پرنٹ ، الیکٹرانک میڈیا ، سوشل میڈیا پر بھی احتجاج کرنے کے علاوہ نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں پریس کانفرنس بھی ہوئی تاہم کرپشن کے خاتمہ کے نام پر اقتدار میں آنے والی تحریک انصاف کی حکومت میں سی ای او ایجوکیشن کے خلاف کوئی کاروائی عمل میں نہ لائی جا سکی تاہم رکن قومی اسمبلی میجر طاہر صادق کی نشاندہی پر وزیر اعظم کی موجودگی میں وزیر اعلیٰ پنجاب نے ان کے تبادلے کے احکامات جاری کر دیئے اس سلسلہ میں سوشل میڈیا پر ایک طویل بحث کا سلسلہ جاری ہو گیا ہے کہ کچھ لوگ اسے رکن قومی اسمبلی میجر طاہر صادق کی جیت قرار رہے ہیں تو کچھ اسے سینیٹ کے انتخاب میں میجر طاہر صادق کے ووٹ کیلئے سی ای او ایجوکیشن اٹک کی قربانی دونوں باتیں ہی مان لی جائیں تب بھی میجر طاہر صادق کا پلڑا بھاری ہی ہو گا ان کی وزیر اعظم ، وزیر اعلیٰ سے ایک ملاقات نے سب کو ڈھیر کر دیا ادھر ضلع اٹک کے عوامی حلقوں ، پرائیویٹ سکولز ایسوسی ایشن اور سیاسی سماجی شخصیات نے ڈاکٹر جاوید اقبال کی بطور سی ای او ایجوکیشن اٹک 2سالہ کارکردگی اور تعلیمی اصلاحات کو سراہا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں