68

پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن نے صحافی عثمان خان کی جانب سے کیمرہ مین پر پستول نکالنے کی واقعہ کی شدید مذمت پارلیمنٹ ہائوس میں اس کے داخلے کی صورت میں ذمہ دار قومی اسمبلی سیکرٹریٹ اور سینٹ سیکرٹریٹ کے میڈیا ونگ ہوں گے۔

پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن کےمفصل آئین کا مسودہ ایگزیکٹو باڈی کو پیش کردیا گیا۔آئینی مسودہ پر غور کے لیے پیر کو پی آر اے کا خصوصی اجلاس طلب
ایگزیکٹو باڈی کا سینٹ سے پیمراترمیمی بل مسترد ہونے کے خلاف پیر کو سینٹ اور قومی اسمبلی کی پریس گیلریوں سے واک آوٹ کا فیصلہ

سیاسی جماعتوں کے سربراہان اور پارلیمانی رہنماؤں کو خطوط بھی لکھیں جائیں کے

صحافی عثمان خان کی جانب سے کیمرہ مین پر پستول نکالنے کی واقعہ کی شدید مذمت ،

صحافی عثمان خان پی آراے کا ممبر نہیں ، پارلیمنٹ ہائوس میں اس کے داخلے کی صورت میں ذمہ دار قومی اسمبلی سیکرٹریٹ اور سینٹ سیکرٹریٹ کے میڈیا ونگ ہوں گے۔

کرونا کے باعث فوت ہونے والے صحافیوں ارشد وحید چوہدری طارق محمود ملک عدیل سرور کے ساتھ ساتھ دیگر صحافیوں کے عزیز واقارب کے لئے دعائے مغفرت

تیس جنوری۔ 2021

اسلام آباد (پ ر)
پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن ( پی آراے ) کا اجلاس صدر بہزاد سلیمی کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا اجلاس میں پی آر اے کے آئینی مسودہ ، صحافیوں اور میڈیا کارکنان کے حقوق کے تحفظ سے متعلق پیمرا ترمیمی بل مسترد ہونے اور سندھ ہاؤس میں چینل 24کے رپورٹر عثمان خان کی طرف سے جھگڑے کے دوران کیمرہ مین پر پستول نکال لینے سے متعلق تحریری شکایت سمیت دیگر اہم امور زیر غور آئے۔
اجلاس کے آغاز پرسیکرٹری جنرل پی آر اے ایم بی سومرو نے پی آر اے کی طرف سے سینئر صحافی رانا غلام قادر کی سربراہی میں بنائی گئی پانچ رکنی آئین ساز کمیٹی کا تیارکردہ تفصیلی آئینی مسودہ صدر پی آر اے بہزاد سلیمی کو پیش کیا ۔ صدر پی آراے اور شرکاء اجلاس نے آئین ساز کمیٹی کا اس مشکل تفصیلی اور عمیق کام پر شکریہ ادا کیا۔ پیر کے روز آئینی مسودے پر غور کے یک نکاتی ایجنڈے پر پی آراے کا خصوصی اجلاس بلانے کا فیصلہ کیا گیا ۔ آئینی ڈرافٹ کو فائنل کرنے کے لئے اگلا اجلاس بدھ یا جمعرات کو طلب کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا۔ یہ فیصلہ کیا گیا کہ ایگزیکٹو باڈی کی منظوری کے بعد آئینی مسودہ کی حتمی منظوری کے لئے جنرل باڈی اجلاس بھی جلد طلب کیا جائے گا ۔ جس کے بعد طے شدہ پیمانے کے مطابق پرانی ممبر لسٹ کا جائزہ لیا جائے اور نئی ممبرشپ کے لیے اب تک موصول ہونے والی درخواستوں پر فیصلہ کیا جائے گا ۔
پی آراے کی ایگزیکٹو باڈی نے سینٹ سے اپوزیشن جماعتوں کی مخالفت کے باعث کارکن صحافیوں کے مفاد کا پیمرا ترمیمی بل مسترد ہونے پر شدید تشویش کا اظہار کیا اور طے کیا ہے کہ پیر کے روز قومی اسمبلی اور سینٹ کی پریس گیلریز سے واک آوٹ کیا جائے گا۔ ایگزیکٹو کمیٹی نے یہ فیصلہ بھی کیا ہے کہ صحافیوں کے بنیادی حقوق سے متعلق قانون سازی کی راہ ہموار کرنے کے لئے پارلیمنٹ میں موجود سیاسی جماعتوں کے سربراہان اور پارلیمانی رہنماؤں کو خطوط لکھے جائیں گے ، بوقت ضرورت پارلیمان کی حدود میں احتجاج کے دیگر جمہوری طریقے اختیار کرنے کے ساتھ پی آراے بات چیت سے حکومت اور اپوزیشن کو میڈیا کارکنوں کے لئے متفقہ بل لانے پر قائل کرے گی ۔

پی آراے ایگزیکٹو باڈی نے سندھ ہاؤس میں چینل 24کے رپورٹر عثمان خان کی طرف سے ڈپٹی چیئرمین سینٹ سلیم مانڈوی والا اور پی پی پی سیکرٹری اطلاعات شازیہ مری کی پریس کانفرنس میں پستول لیکر جانے اور پھر کیمرہ مین سے تلخ کلامی کے بعد اس پر پستول نکالنے سے متعلق موصول ہونے والی تحریری شکایات کا جائزہ لیا گیا ۔ صدر اور سیکرٹری پی آر اے نے پاکستان پیپلز پارٹی اور کیمرہ مین ایسوسی ایشن کی جانب سے پی آر اے کو لکھے گئے خطوط اجلاس میں پیش کئے۔ پی آراے کی ایگزیکٹو باڈی نےایک صحافی کی جانب سے پیشہ دارانہ فرائض کی ادائیگی کے دوران آتشی ہتھیار ساتھ رکھنے اور اسے کیمرہ مین پر نکالنے کے واقعہ پرشدید تشویش کا اظہار کیا اور اس کی شدید مذمت کی ہے ۔ پی آراے ایگزیکٹو باڈی نے قرار دیا کہ صحافی کا ہتھیار قلم ہوتا ہے نا کہ پستول ۔ ایک صحافی کے انتہائی نامناسب اور ناقابل قبول اقدام سے ناصرف پوری صحافتی برادری کی بدنامی ہوئی ہے بلکہ اہم سرکاری عمارتوں اور مقامات میں صحافیوں کی باآسانی رسائی کے حوالے سے بھی خدشات ظاہر کیے جانے لگے ہیں۔ صحافی عثمان خان کی پارلیمنٹ ہائوس میں آمد کے حوالے سے بھی سوالات پیدا ہوئے ہیں ۔صحافی عثمان خان پی آراے کا ممبر نہیں ہے ، پارلیمنٹ ہائوس میں اس کے داخلے کی صورت میں اس کے ذمہ دار قومی اسمبلی سیکرٹریٹ اور سینٹ سیکرٹریٹ کے میڈیا ونگ ہوں گے ۔ پی آراے ایگزیکٹو کمیٹی نے اپنے ممبران پر زور دیا ہے کہ وہ پارلیمنٹ ہائوس میں آمدورفت کے وقت قانونی اور تنظیمی ضابطوں اور طے شدہ ایس او پیز پر پہلے کی طرح مکمل عمل درآمد کو یقینی بنائیں اور سیکیورٹی عملے سے مکمل تعاون کریں ۔
ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس میں کرونا کے باعث انتقال کر جانے والے پی آراے کے سابق سیکرٹری ارشد وحید چوہدری ، طارق محمود ملک اور عدیل سرور کے لئے دعائے مغفرت کی گئی اسی طرح دیگر صحافیوں کے جو عزیز و اقارب حال ہی میں فوت ہوئے ہیں ان کے لئے بھی دعائے مغفرت کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں